نواز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج نہ ہوسکا، لندن روانگی تاخیر کا شکار

نواز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج نہ ہوسکا، لندن روانگی تاخیر کا شکار

 07:16 pm  

لاہور: سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکل نہ سکا جس پر ان کی روانگی مزید تاخیر کا شکار ہوگئی وہ اب پیر کو لندن روانہ ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق حکومت کی جانب سے ای سی ایل سے نام نکالنے کا فیصلہ کیے جانے کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیرون ملک روانگی کو حتمی شکل دی جارہی ہے، نواز شریف نے اتوار کی صبح لندن جانے ارادہ کیا تھا تاہم نیب کی جانب سے ای سی ایل سے ان کا نام نہ نکالا جاسکا جس کے باعث ان کی روانگی مزید ایک دن تاخیر سے ہوگی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ میاں شہباز شریف، جنید صفدر، ڈاکٹر عدنان سمیت شریف فیملی کے دیگر افراد بھی نواز شریف کے ہمراہ لندن جائیں گے البتہ مریم نواز قانونی پابندیوں کے سبب ان کے ساتھ نہیں جاسکیں گی۔

ذرائع نے بتایا کہ نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا معاملہ وزارت داخلہ نے نیب کو بھیج دیا ہے اور امکان یہی ہے کہ نواز شریف کو صرف ایک بار بیرون ملک جانے کی اجازت دی جائے گی تاہم نام تاحال ای سی ایل سے خارج نہیں ہوسکا۔

نوازشریف کی ناسازی طبیعت کے باعث غیرملکی ایئر لائن کی ایئرایمبولینس بک کرائے جانے پر غور کیا جارہا ہے۔ (ن) لیگی ذرائع کے مطابق نوازشریف کےعلاج کے لئے سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈارنے لندن میں انتظامات مکمل کرلئے ہیں،

ادھر ایوی ایشن ذرائع کا کہنا ہے کہ  سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کو علاج کیلئے بیرون ملک لے جانے کے لیے دوحہ سے ائیر ایمبولینس منگوانے کا فیصلہ کیا گیا ہے، ایئرایمبولینس آج شام یا کل صبح لاہور ایئرپورٹ پہنچ جائے گی۔

نواز شریف کے معالج ڈاکٹرعدنان نے بھی بیرون ملک علاج کے لئے جانے کا مشورہ دیا اور شریف خاندان کوبریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کی طبیعت سے متعلق رپورٹس ٹھیک نہیں۔

والدہ شمیم اختر نے نوازشریف سے کہا کہ بیرون ملک علاج کروایا جائے جب کہ شہبازشریف نے کہا کہ آپ کی صحت کے حوالے سے بہت فکر مند ہیں، علاج کروانا بہت ضروری ہے۔

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں۔
Copyright © 2019 Urdu News. All Rights Reserved