Home    Health

صحت
بہرے پن کی وجہ بننے والے 44 جین دریافت بہرے پن کی وجہ بننے والے 44 جین دریافت
بہرے پن کی وجہ بننے والے 44 جین دریافت بہرے پن کی وجہ بننے والے 44 جین دریافت

 لندن: سماعت میں کمی اور اس سے محرومی کی کئی وجوہ ہوسکتی ہیں اور اس ضمن میں ماہرین نے 44 ایسے نئے جین دریافت کیے ہیں جو ثقلِ سماعت کی وجہ بن سکتے ہیں یا مکمل بہرے پن میں اپنا اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ اس دریافت سے توقع ہے کہ سماعت سے محرومی کے علاج میں بھی مدد مل سکے گی اور ہم بہرے پن کو مزید اچھی طرح سمجھ سکیں گے۔ کنگز کالج لندن اور یونیورسٹی کالج آف لندن کے ماہرین نے اس تحقیق میں اہم کردار ادا کیا ہے جس کی تفصیلات امریکن جرنل آف ہیومن جینیٹکس میں شائع ہوئی ہیں۔ اس میں بتایا گیا کہ 44 جین ایسے ہیں جو عمر رسیدگی کے ساتھ ساتھ ثقلِ سماعت میں اپنا اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ تحقیق کے لیے دونوں جامعات کے ماہرین نے 40 سے 69 سال تک کے ڈھائی لاکھ افراد کا ڈیٹا بیس حاصل کیا اور ان کا جینیاتی مطالعہ کیا۔ ان میں مکمل طور پر سماعت سے محروم اور ثقلِ سماعت کے بہت سے افراد شامل تھے۔ ماہرین نے مکمل تجزیئے کے بعد 44 جین معلوم کرلیے ہیں۔65 سال کی عمر کے بعد سے اکثر افراد کی سماعت میں خلل واقع ہوتا ہے۔ اس سے بوڑھے افراد لوگوں کی بات نہ سننے کی وجہ سے سماجی تنہائی اور یاسیت کے شکار ہوجاتے ہیں جس سے


تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں۔
Copyright © 2019 Urdu News. All Rights Reserved